افغانستان

افغانستان وسط ایشیا اور جنوبی ایشیا میں واقع ایک زمین بند ملک ہے۔ Dari: Afġānestān [avɣɒnesˈtɒn])، جس کا سرکاری نام اسلامی جمہوریہ افغانستان ہے۔ اس کے جنوب اور مشرق میں پاکستان، مغرب میں ایران، شمال مشرق میں چین، شمال میں ترکمانستان، ازبکستان اور تاجکستان ہیں۔ اردگرد کے تمام ممالک سے افغانستان کے تاریخی، مذہبی اور ثقافتی تعلق بہت گہرا ہے۔ اس کے بیشتر لوگ مسلمان ہیں۔ یہ ملک بالترتیب ایرانیوں، یونانیوں، عربوں، ترکوں، منگولوں، برطانیوں، روسیوں اور اب امریکہ کے قبضے میں رہا ہے۔ مگر اس کے لوگ بیرونی قبضہ کے خلاف ہمیشہ مزاحمت کرتے رہے ہیں۔ ایک ملک کے طور پر اٹھارویں صدی کے وسط میں احمد شاہ ابدالی کے دور میں یہ ابھرا اگرچہ بعد میں درانی کی سلطنت کے کافی حصے اردگرد کے ممالک کے حصے بن گئے۔
1919ء میں شاہ امان اللہ خان کی قیادت میں انگریزوں سے افغانستان کی آزادی حاصل کی۔ جس کے بعد افغانستان صحیح معنوں میں ایک ملک بن گیا۔ مگر انگریزوں کے دور میں اس کے بیشتر علاقے حقیقت میں آزاد ہی تھے اور برطانیہ کبھی اس پر مکمل قبضہ نہیں رکھ سکا۔ آج افغانستان امریکی قبضہ میں ہے اور بظاہر ایک آزاد ملک اور حکومت کے طور پر تسلیم کیا جاتا ہے۔ افغانستان پچھلے پینتیس سال سے مسلسل جنگ کی سی حالت میں ہے جس نے اس کو تباہ کر دیا ہے اور اس کی کئی نسلوں کو بے گھر کر دیا ہے۔ یہ تباہی کبھی غیروں کے ہاتھوں ہوئی اور کبھی خانہ جنگی سے یہ صورت حال پیدا ہوئی۔ اگرچہ افغانستان کے پاس تیل یا دوسرے وسائل کی کمی ہے مگر اس کی جغرافیائی حیثیت ایسی ہے کہ وہ وسطی ایشیاء، جنوبی ایشیاء اور مشرقِ وسطیٰ کے درمیان میں ہے اور تینوں خطوں سے ہمیشہ اس کے نسلی، مذہبی اور ثقافتی تعلق رہا ہے اور جنگی لحاظ سے اور علاقے میں اپنا دباؤ رکھنے کے لیے ہمیشہ اہم رہا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ استعماری طاقتوں نے ہمیشہ اس پر اپنا قبضہ یا اثر رکھنے کی کوشش کی ہے۔ افغانستان کا زیادہ رقبہ پتھریلا پہاڑی علاقہ ہے اس وجہ سے کسی بھی بیرونی طاقت کا یہاں قبضہ رکھنا مشکل ہے اور لوگ زیادہ تر قبائلی ہیں اس لیے کبھی بیرونی طاقتوں کو تسلیم نہیں کرتے، نتیجہ یہ کہ اس ملک کو کبھی بھی لمبے عرصے کے لیے امن نصیب نہیں ہو سکا۔

  

افغانستان
پرچم افغانستان   نشان

 

ترانہ:سرود ملی افغانستان  
زمین و آبادی
متناسقات 34°N 66°E / 34; 66  
بلند مقام نوشاخ (7492 میٹر ) 
پست مقام دریائے جیحوں (258 میٹر ) 
رقبہ 652230 مربع کلومیٹر  
دارالحکومت کابل  
سرکاری زبان پشتو ،  دری فارسی  
آبادی 34940837 (2018) 
اوسط عمر
54.959 سال (1999)
55.482 سال (2000)
56.044 سال (2001)
56.637 سال (2002)
57.25 سال (2003)
57.875 سال (2004)
58.5 سال (2005)
59.11 سال (2006)
59.694 سال (2007)
60.243 سال (2008)
60.754 سال (2009)
61.226 سال (2010)
61.666 سال (2011)
62.086 سال (2012)
62.494 سال (2013)
62.895 سال (2014)
63.288 سال (2015)
63.673 سال (2016) 
حکمران
طرز حکمرانی اسلامی جمہوریہ  
صدر افغانستان   اشرف غنی احمد زئی (29 ستمبر 2014–) 
چیف ایگزیکٹیو افغانستان   عبداللہ عبداللہ (سیاستدان) (29 ستمبر 2014–) 
قیام اور اقتدار
تاریخ
یوم تاسیس 1709،  1747،  1823،  1926،  1973،  1978،  1992،  2002 
عمر کی حدبندیاں
شادی کی کم از کم عمر 18 سال ،  16 سال  
الحاق اور رکنیت
اقوام متحدہ (19 نومبر 1946–)
تنظیم تعاون اسلامی
بین الاقوامی بنک برائے تعمیر و ترقی (14 جولا‎ئی 1995–)
بین الاقوامی انجمن برائے ترقی (2 فروری 1961–)
بین الاقوامی مالیاتی شرکت (23 ستمبر 1957–)
کثیرالفریق گماشتگی برائے ضمانت سرمایہ کاری (16 جون 2003–)
بین الاقوامی مرکز برائےتصفیہ تنازعات سرمایہ کاری (25 جولا‎ئی 1968–)
ایشیائی ترقیاتی بینک (1966–)
انٹرپول
تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار
یونیسکو (4 مئی 1948–)
عالمی ڈاک اتحاد
عالمی ٹیلی مواصلاتی اتحاد (12 اپریل 1928–) 
مشترکہ سرحدیں
پاکستان (Afghanistan–Pakistan border )
ایران (افغانستان ایران سرحد )
ترکمانستان (Afghanistan–Turkmenistan border )
ازبکستان (Afghanistan–Uzbekistan border )
تاجکستان (Afghanistan–Tajikistan border )
عوامی جمہوریہ چین (Afghanistan–China border )
سوویت اتحاد  
خام ملکی پیداوار
  کل
20815300220.0428 امریکی ڈالر (2017) 
  فی کس 859.933 بین الاقوامی ڈالر (2002) 
جی ڈی پی تخمینہ
  فی کس 59 امریکی ڈالر (1960)
59 امریکی ڈالر (1961)
58 امریکی ڈالر (1962)
78 امریکی ڈالر (1963)
82 امریکی ڈالر (1964)
101 امریکی ڈالر (1965)
137 امریکی ڈالر (1966)
161 امریکی ڈالر (1967)
129 امریکی ڈالر (1968)
129 امریکی ڈالر (1969)
157 امریکی ڈالر (1970)
160 امریکی ڈالر (1971)
136 امریکی ڈالر (1972)
144 امریکی ڈالر (1973)
174 امریکی ڈالر (1974)
187 امریکی ڈالر (1975)
199 امریکی ڈالر (1976)
226 امریکی ڈالر (1977)
249 امریکی ڈالر (1978)
277 امریکی ڈالر (1979)
274 امریکی ڈالر (1980)
266 امریکی ڈالر (1981)
184 امریکی ڈالر (2002)
195 امریکی ڈالر (2003)
216 امریکی ڈالر (2004)
247 امریکی ڈالر (2005)
269 امریکی ڈالر (2006)
366 امریکی ڈالر (2007)
370 امریکی ڈالر (2008)
444 امریکی ڈالر (2009)
550 امریکی ڈالر (2010)
599 امریکی ڈالر (2011)
648 امریکی ڈالر (2012)
647 امریکی ڈالر (2013)
625 امریکی ڈالر (2014)
590 امریکی ڈالر (2015)
549 امریکی ڈالر (2016)
550 امریکی ڈالر (2017) 
کل ذخائر 45547800 امریکی ڈالر (1963)
44619680 امریکی ڈالر (1964)
45434560 امریکی ڈالر (1965)
47114050 امریکی ڈالر (1966)
38528800 امریکی ڈالر (1967)
45589800 امریکی ڈالر (1968)
41373600 امریکی ڈالر (1969)
49488930 امریکی ڈالر (1970)
67614026 امریکی ڈالر (1971)
81289660 امریکی ڈالر (1972)
126230158 امریکی ڈالر (1973)
201456356 امریکی ڈالر (1974)
217260903 امریکی ڈالر (1975)
256505577 امریکی ڈالر (1976)
431038896 امریکی ڈالر (1977)
605029119 امریکی ڈالر (1978)
934779039 امریکی ڈالر (1979)
940035968 امریکی ڈالر (1980)
657880757 امریکی ڈالر (1981)
698660805 امریکی ڈالر (1982)
582311039 امریکی ڈالر (1983)
526217137 امریکی ڈالر (1984)
610761731 امریکی ڈالر (1985)
635742142 امریکی ڈالر (1986)
746832947 امریکی ڈالر (1987)
657015441 امریکی ڈالر (1988)
630659707 امریکی ڈالر (1989)
637925667 امریکی ڈالر (1990)
576118920 امریکی ڈالر (1991)
3042274495 امریکی ڈالر (2008)
4265888672 امریکی ڈالر (2009)
5162440197 امریکی ڈالر (2010)
6344642495 امریکی ڈالر (2011)
7152304411 امریکی ڈالر (2012)
7288702808 امریکی ڈالر (2013)
7528550402 امریکی ڈالر (2014)
6976966101 امریکی ڈالر (2015)
7281910391 امریکی ڈالر (2016)
8097280955 امریکی ڈالر (2017) 
اشاریہ انسانی ترقی
اشاریے
0.498 (2017) 
شرح بے روزگاری 9 فیصد (2014)
8.5 فیصد (2017) 
دیگر اعداد و شمار
کرنسی افغانی  
منطقۂ وقت متناسق عالمی وقت+04:30  
ٹریفک سمت دائیں  
ڈومین نیم af.  
آیزو 3166-1 الفا-2 AF 
بین الاقوامی فون کوڈ +93 
This article is issued from Wikipedia. The text is licensed under Creative Commons - Attribution - Sharealike. Additional terms may apply for the media files.