ناروہیتو

ناروہیٹو (جاپانی: 徳仁، پیدائش: 23 فروری 1960ء) جاپان کے موجودہ شہنشاہ ہیں۔ان کے والد آکی ہیتو 30 اپریل 2019ء کو تخت سے دستبردار ہوئے اس سے اگلے دن ولی عہد نارو ہیتو 1 مئی 2019ء کو تخت نشین ہو گئے۔

ناروہیتو
(جاپانی میں: 徳仁) 
 

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (جاپانی میں: 浩宮徳仁親王) 
پیدائش 23 فروری 1960 (59 سال)[1] 
توکیو  
شہریت جاپان  
مذہب شنتو مت
زوجہ ملکہ ماساکو  
اولاد آئیکو  
والد آکی ہیتو ساما  
والدہ میچیکو  
بہن/بھائی
سایاکو کورودا ،  فومی ہیتو  
خاندان یاماتو خاندان  
مناصب
شہنشاہ جاپان (126  )  
آغاز منصب
1 مئی 2019 
آکی ہیتو ساما  
 
دیگر معلومات
مادر علمی میرٹن کالج، اوکسفرڈ
گاکوشوین یونیورسٹی  
پیشہ بادشاہ [2] 
پیشہ ورانہ زبان جاپانی  
اعزازات
 آرڈر آف کلچر (2019)
 آرڈر آف ایلی فینٹ (2004)[3]
 آرڈر آف سیکا تونا (2002)
آرڈر آف زاید (1995)
 نشان استحقاق دولت قطر  

نام

جاپانی شہنشاہ کا نام نہيں ليا جاتا بلکہ اس کے ليے احتراماً تین نو ہیکا (تے ن نو ہے ی کا / 天皇陛下) کا لفظ استعمال کیا جاتا ہے، جیسے مغل شہنشاہوں کے ليے عالم پناہ اور ظل الہی کے الفاظ استعمال کیے جاتے تھے اور اگر کہیں نام لینے کی ضرورت پڑے تو نام کے بعد ساما (محترم / جناب) کا اضافہ کر دیا جاتا ہے۔ ہر بادشاہ کے دور کا ایک نام منتخب کیا جاتا ہے جس کو اس نام کی جیدای کہتے ہیں (جیدای کے معنی عہـد / دور کے ہیں)۔نارو ہیتو کے والد آکى ہى طو صاحب کے دور کا نام حے سے (درست تلفظ حے ی سے ی ہے جو رواں بول چال میں حے سے ہے) تھا۔

ابتدائی حالات

نارو ہیتو 23 فروری 2019 کو ٹوکیو کے شاہی محل میں پیدا ہوئے۔ ان کی والدہ ملکہ می چیکو شودا نے رومی کاتھولک مسیحیت ترک کے شنتو مت قبول کیا تھا۔ نارو ہیتو کی ولادت سے قبل ان کے والد (جو اس وقت ولی عہد تھے) کی می چیکو شودا کے ساتھ شادی رجعت پسند جماعتوں کے ہاں تنقید کا ہدف بنی ہوئی تھی۔کیوں کہ می چیکو شودا ایک رومن کیتھولک خاندان سے تعلق رکھتی تھیں اور انہوں نے کیتھولک اسکولوں میں تعلیم پائی تھی۔ گرچہ ان کا بپتسمہ نہیں کیا گیا تھا۔

تعلیم

چار سال کی عمر میں نارو ہیتوگاکوشوین(Gakushuin) اسکول سسٹم میں داخل ہوئے جو جاپان کا ایک مایہ ناز اور متمول خاندانوں کا پسندیدہ تعلیمی ادارہ ہے۔مارچ 1982ء میں نارو ہیتو گاکوشوین یونیورسٹی سے تاریخ میں بیچلر کی ڈگری لے کر فارغ ہوئے۔جولائی 1983ء وہ انگریزی زبان کے ایک سہ ماہی کورس میں شرکت کرنے میرٹن کالج آکسفورڈ یونیورسٹی برطانیہ چلے گئے جہاں وہ 1986ء تک زیر تعلیم رہے۔اسی دوران انہوں نے اپنا مقالہ بھی تحریر کیا جس کا عنوان تھا:

A Study of Navigation and Traffic on the Upper Thames in the 18th Century

یہ مقالہ انہوں نے 1989ء میں جمع کروایا۔ نارو ہیتو رطانیہ میں قیام کے دوران مختلف کھیلوں میں بھی شریک رہے جن میں گولف، ٹینس اور میرتھن ریس شامل ہیں۔

انہوں نے اس دوران دنیا کے مختلف خطوں کی سیاحت بھی کی اور وہاں کے حکمرانوں سے بھی ملے۔ وہ ملکہ برطانیہ کی سادگی سے خصوصی طور پر متاثر ہوئے۔

تصنیفات

  • 2006 - دریائے تھیمز اور میں، آکسفورڈ میں گزرے دو سالوں کا آئینہ
  • 1993 – Temuzu to tomoni: Eikoku no ninenkan (テムズとともに: 英国の二年間

القاب

  • عزت مآب شہزادۂ جاپان (23 فروری 1960 تا 23 فروری 1991)
  • عزت مآب ولی عہد جاپان ( 23 فروری 1991 تا 1 اپریل 2019)
  • جلالت مآب شہنشاہ سلطنت جاپان (1 مئی 2019 تا حال)

حوالہ جات

  1. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Naruhito — بنام: Naruhito — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  2. https://edition.cnn.com/2019/04/30/asia/japan-emperor-naruhito-reiwa-era-intl/index.html — اخذ شدہ بتاریخ: 1 مئی 2019
  3. http://kongehuset.dk/modtagere-af-danske-dekorationer
This article is issued from Wikipedia. The text is licensed under Creative Commons - Attribution - Sharealike. Additional terms may apply for the media files.