مالدووا

مالدووا مشرقی یورپ کا ایک ملک ہے۔ جس کا ذکر مسلم تاریخ میں بغدان ایلی یا بغدان ولایتی کے نام سے کیا جاتا ہے۔ بغدان کا نام اسے عثمانی ترکوں نے دیا تھا جنہوں نے عرصہ دراز تک مالدووا پر حکومت کی۔ ترک اسے 1359ء میں جبال کارپات (انگریزی: Caprpathians Mountains) اور دریائے دنیستر (انگریزی: Daniester River) کے مشرقی جانب قائم ایک ریاست کے بانی بغدان کے نام پر بغدان ایلی کہا کرتے ہیں۔

  

مالدووا
(رومانیائی میں: Moldova) 
مالدووا
پرچم
مالدووا
نشان

 

ترانہ:
زمین و آبادی
متناسقات 47.25°N 28.516667°E / 47.25; 28.516667   [1]
رقبہ 33846.0 مربع کلومیٹر  
دارالحکومت کیشیناو  
سرکاری زبان مالدووی زبان ،  رومانیانی زبان  
آبادی 2550900 (2017) 
اوسط عمر
66.852 سال (1999)[2]
67.006 سال (2000)[2]
67.185 سال (2001)[2]
67.362 سال (2002)[2]
67.521 سال (2003)[2]
67.665 سال (2004)[2]
67.82 سال (2005)[2]
68.022 سال (2006)[2]
68.302 سال (2007)[2]
68.671 سال (2008)[2]
69.119 سال (2009)[2]
69.616 سال (2010)[2]
70.117 سال (2011)[2]
70.577 سال (2012)[2]
70.961 سال (2013)[2]
71.258 سال (2014)[2]
71.468 سال (2015)[2]
71.61 سال (2016)[2] 
حکمران
قیام اور اقتدار
تاریخ
یوم تاسیس 27 اگست 1991 
عمر کی حدبندیاں
الحاق اور رکنیت
مشترکہ سرحدیں
یوکرین (Moldova–Ukraine border )
رومانیہ (Moldova–Romania border )
ٹرینسنیسٹریا
یورپی اتحاد  
خام ملکی پیداوار
  کل
8128493432.07741 امریکی ڈالر (2017)[8] 
  فی کس 1899.17 بین الاقوامی ڈالر (1995)[9] 
جی ڈی پی تخمینہ
  فی کس 476 امریکی ڈالر (1995)[10]
462 امریکی ڈالر (1996)[10]
528 امریکی ڈالر (1997)[10]
465 امریکی ڈالر (1998)[10]
321 امریکی ڈالر (1999)[10]
354 امریکی ڈالر (2000)[10]
407 امریکی ڈالر (2001)[10]
458 امریکی ڈالر (2002)[10]
548 امریکی ڈالر (2003)[10]
720 امریکی ڈالر (2004)[10]
831 امریکی ڈالر (2005)[10]
950 امریکی ڈالر (2006)[10]
1230 امریکی ڈالر (2007)[10]
1695 امریکی ڈالر (2008)[10]
1525 امریکی ڈالر (2009)[10]
1631 امریکی ڈالر (2010)[10]
1970 امریکی ڈالر (2011)[10]
2046 امریکی ڈالر (2012)[10]
2243 امریکی ڈالر (2013)[10]
2244 امریکی ڈالر (2014)[10]
1832 امریکی ڈالر (2015)[10]
1913 امریکی ڈالر (2016)[10]
2290 امریکی ڈالر (2017)[10] 
کل ذخائر 2452050 امریکی ڈالر (1992)[11]
76335740 امریکی ڈالر (1993)[11]
179920346 امریکی ڈالر (1994)[11]
257008835 امریکی ڈالر (1995)[11]
311957990 امریکی ڈالر (1996)[11]
365985641 امریکی ڈالر (1997)[11]
143562514 امریکی ڈالر (1998)[11]
185700972 امریکی ڈالر (1999)[11]
222490326 امریکی ڈالر (2000)[11]
228532258 امریکی ڈالر (2001)[11]
268855943 امریکی ڈالر (2002)[11]
302270799 امریکی ڈالر (2003)[11]
470258875 امریکی ڈالر (2004)[11]
597448067 امریکی ڈالر (2005)[11]
775478570 امریکی ڈالر (2006)[11]
1333684647 امریکی ڈالر (2007)[11]
1672406460 امریکی ڈالر (2008)[11]
1480265226 امریکی ڈالر (2009)[11]
1717685351 امریکی ڈالر (2010)[11]
1965325537 امریکی ڈالر (2011)[11]
2515016645 امریکی ڈالر (2012)[11]
2820638989 امریکی ڈالر (2013)[11]
2156677865 امریکی ڈالر (2014)[11]
1756772262 امریکی ڈالر (2015)[11]
2205927462 امریکی ڈالر (2016)[11]
2803268841 امریکی ڈالر (2017)[11] 
اشاریہ انسانی ترقی
اشاریے
0.693 (2014)[12] 
شرح بے روزگاری 3 فیصد (2014)[13] 
دیگر اعداد و شمار
منطقۂ وقت 00 (معیاری وقت ) 
ٹریفک سمت دائیں [14] 
ڈومین نیم md.  
سرکاری ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ 
آیزو 3166-1 الفا-2 MD 
بین الاقوامی فون کوڈ +373 

بغدان پر قبضے کی ابتدائی دو ناکام کوششوں کے بعد عثمانیوں نے خانان کریمیا کے ساتھ مل کر لشکر کشی کی اور اسے عثمانی سلطنت میں شامل کر لیا۔

1775ء میں آسٹریلیا نے مالدووا کے شمال مغربی حصے بکووینا پر قبضہ کر لیا اور 1812ء میں روس نے بیسربیا (انگریزی: Bessarabia) کا الحاق کر دیا۔ 1859ء میں افلاق اور مالدووا کو ملا کر رومانیہ تشکیل دیا گیا جسے 1878ء میں ترکوں سے آزادی مل گئی۔

موجودہ مالدووا چاروں طرف سے خشکی میں محصور ہے اور رومانیہ اور یوکرین کے درمیان واقع ہے۔ اس کا دار الحکومت چشیناؤ ہے۔ یہ علاقہ سوویت اتحاد کے قبضے میں رہا ہے اور 1991ء میں سقوط سوویت اتحاد کے بعد ایک آزاد ریاست کی حیثیت سے دنیا کے نقشے پر ابھرا۔

متعلقہ مضامین مالدووا

  • فہرست متعلقہ مضامین مالدووا

فہرست ہم نام ریاستیں اور علاقے

  1.   "صفحہ مالدووا في خريطة الشارع المفتوحة"۔ OpenStreetMap۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 اگست 2019۔
  2. http://data.uis.unesco.org/Index.aspx?DataSetCode=DEMO_DS
  3. https://www.interpol.int/Member-countries/World — اخذ شدہ بتاریخ: 7 دسمبر 2017 — ناشر: انٹرپول
  4. https://www.opcw.org/about-opcw/member-states/ — اخذ شدہ بتاریخ: 7 دسمبر 2017 — ناشر: تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار
  5. http://www.unesco.org/eri/cp/ListeMS_Indicators.asp
  6. http://www.upu.int/en/the-upu/member-countries.html — اخذ شدہ بتاریخ: 4 مئی 2019
  7. https://www.itu.int/online/mm/scripts/gensel8 — اخذ شدہ بتاریخ: 4 مئی 2019
  8. https://data.worldbank.org/indicator/NY.GDP.MKTP.CD?locations=MD — اخذ شدہ بتاریخ: 19 اکتوبر 2018 — ناشر: عالمی بنک
  9. https://data.worldbank.org/indicator/NY.GDP.PCAP.PP.CD — اخذ شدہ بتاریخ: 11 جون 2019 — ناشر: عالمی بنک
  10. https://data.worldbank.org/indicator/NY.GDP.PCAP.CD — اخذ شدہ بتاریخ: 27 مئی 2019 — ناشر: عالمی بنک
  11. https://data.worldbank.org/indicator/FI.RES.TOTL.CD — اخذ شدہ بتاریخ: 1 مئی 2019 — ناشر: عالمی بنک
  12. http://hdr.undp.org/en/countries/profiles/MDA
  13. http://data.worldbank.org/indicator/SL.UEM.TOTL.ZS
  14. http://chartsbin.com/view/edr
This article is issued from Wikipedia. The text is licensed under Creative Commons - Attribution - Sharealike. Additional terms may apply for the media files.