جکارتا

جکارتا یا جکارتہ انڈونیشیا کا دار الحکومت اور سب سے بڑا شہر ہے۔ جزیرہ جاوا کے شمال مغربی ساحلوں پر واقع شہر جکارتا 661.52 مربع کلومیٹر پر پھیلا ہوا ہے اور اس کی آبادی 2004ء کے مطابق 8،792،000 ہے۔ شہر گذشتہ 490 سال سے آباد ہے اور اس وقت دنیا کا 9 واں گنجان آباد ترین شہر ہے جہاں 44،283 افراد فی مربع میل بستے ہیں۔

  

جکارتا
(انڈونیشیائی میں: Jakarta)
(جاوی میں: Jakarta)
(بیلا روسی میں: Батавія) 
 

جکارتا
پرچم
جکارتا
نشان

تاریخ تاسیس 22 جون 1527 
  نقشہ

انتظامی تقسیم
ملک انڈونیشیا   [1][2]
دارالحکومت برائے
تقسیم اعلیٰ جاوا [3] 
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 6.21462°S 106.84513°E / -6.21462; 106.84513   [4]
رقبہ 662 مربع کلومیٹر  
بلندی 8 میٹر ،  16 میٹر  
آبادی
کل آبادی 10348348 (2017)[5] 
مزید معلومات
جڑواں شہر
اوقات متناسق عالمی وقت+07:00  
گاڑی نمبر پلیٹ
B 
رمزِ ڈاک
10110–14540
19110–19130 
فون کوڈ 021 
آیزو 3166-2 ID-JK 
باضابطہ ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ 
جیو رمز 1642907،1642911 
[مکمل اسکرین پر]

تاریخ

تاریخ میں جکارتا کا پہلا نشان چوتھی صدی عیسوی میں ایک ہندو آبادی کی حیثیت سے ملتا ہے۔ 14 ویں صدی میں یہ ہندو سلطنت سنڈا کی اہم ترین بندرگاہ رہا۔ 1513ء میں پہلا یورپی بحری بیڑا یہاں پہنچا جو 4 پرتگیزی بحری جہازوں پر مشتمل تھا۔ سنڈا کی سلطنت نے وسطی جاوا کی مسلم سلطنت دیماک کے خلاف اپنے دفاع کے لیے پرتگیزیوں کو خوش آمدید کہا اور انہیں گودام اور قلعہ بنانے کی اجازت دے دی۔ 1527ء میں سلطنت دیماک کے مسلمانوں نے فتح اللہ کی قیادت میں سنڈا کی ریاست کے خلاف جنگ چھیڑدی۔ سنڈا سلطنت پرتگیزی بیڑے کے انتظار میں رہے جیسا کہ دونوں کے درمیان معاہدہ طے پایا تھا لیکن پرتگیزی بیڑا نہ آیا اور بالآخر فتح اللہ کی افواج نے 22 جون 1557ء کو جکارتا فتح کر لیا اور فتح اللہ نے شہر کا نام سنڈا کلاپا سے تبدیل کرکے "جے کارتہ" یعنی "مکمل فتح" رکھ دیا۔

جڑواں شہر

 یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔
  1.  "صفحہ جکارتا في GeoNames ID"۔ GeoNames ID۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2019۔
  2.   "صفحہ جکارتا في ميوزك برينز."۔ MusicBrainz area ID۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2019۔
  3. https://www.iso.org/obp/ui/#iso:code:3166:ID
  4.   "صفحہ جکارتا في خريطة الشارع المفتوحة"۔ OpenStreetMap۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2019۔
  5. https://jakbarkota.bps.go.id/publication/download.html?nrbvfeve=NTQyNWE1Y2E1NmY1NWNjYTY2M2I3ZTAw&xzmn=aHR0cHM6Ly9qYWtiYXJrb3RhLmJwcy5nby5pZC9wdWJsaWNhdGlvbi8yMDE4LzEyLzI4LzU0MjVhNWNhNTZmNTVjY2E2NjNiN2UwMC9zdGF0aXN0aWstZGFlcmFoLWtvdGEtamFrYXJ0YS1iYXJhdC0yMDE4Lmh0bWw%3D&twoadfnoarfeauf=MjAxOS0wNS0zMSAxMjowODozMA%3D%3D
This article is issued from Wikipedia. The text is licensed under Creative Commons - Attribution - Sharealike. Additional terms may apply for the media files.